جامعہ سندھ کے قائم مقام وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر محمد صدیق کلہوڑو نے کہا ہے کہ کورونا وائرس کے باعث 6 ماہ یونیورسٹی بند رہنے کے سبب ہونے والے تعلیمی نقصان کے ازالے کیلئے کی جانے والی کوششوں کے مثبت نتائج سامنے آ رہے ہیں، ایل ایل بی حصہ اول کے نتائج جاری کئے گئے،حصہ دوئم و سوئم کے امتحانات کے نتائج بھی جاری کیے جا رہے ہیں، بی اے، بی ایس سی اور ایم اے کے سالانہ امتحانات کے ملتوی شدہ پرچے بھی لیے جا رہے ہیں، نومبر سے تمام بیچز کے دوسرے سیمسٹر کے کلاسز بھی شروع ہو جائیں گی، جلد یونیورسٹی کو سالانہ تعلیمی کیلنڈر پر لایا جائیگا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گذشتہ روز سوشل سائنسز فیکلٹی کے مختلف شعبوں میں سے رٹائرڈ ہونے والے 3 پروفیسرز اکنامکس کے ڈاکٹر امتیاز پیرزادو، آئی بی اے کے ڈاکٹر شبیر شیخ اور سندھ ڈولپمنٹ اسٹڈیزسینٹر کے ڈاکٹر غلام علی جاریکو سے الوداعی ملاقات کے دوران بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سوشل سائنسز فیکلٹی کی ڈین پروفیسر ڈاکٹر زرین عباسی بھی موجود تھی۔ وائس چانسلر پروفیسر (میریٹوریس) ڈاکٹر محمد صدیق کلہوڑو نے رٹائرڈ ہونے والے پروفیسرز کیلئے نیک تمناؤں کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ سندھ یونیورسٹی میں اصلاحات کیلئے عملی اقدام لیے جا رہے ہیں، جن کا ثمر جلد طلباء تک منتقل ہوگا۔ ملاقات کے دوران شیخ الجامعہ سندھ نے یونیورسٹی سروس سے سبکدوش ہونے والے سوشل سائنسز کے تینوں پروفیسرز ڈاکٹر امتیاز پیرزادو، ڈاکٹر شبیر شیخ اور ڈاکٹر غلام علی جاریکو کو پھولوں کے ہار پہنائے اور اجرک کے تحائف بھی دیے۔